اسرائیل دہشتگرد ریاست ہے، ترک صدر

اسرائیل دہشتگرد ریاست ہے، ترک صدر

بین اقوامی تازہ ترین

ترک صدر رجب طیب اردوان نے اسرائیل کو ’دہشت گرد ریاست‘ قرار دیدیا۔

ترک میڈیا کے مطابق رمضان المبارک کے مہینے میں مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیل فوج کی جانب سے فلسطینی نوجوانوں پر ربڑ کی گولیاں فائر کرنے، گرینیڈ سے حملوں اور تشدد کرنے پر اسرائیل کو دہشت گرد ریاست قرار دیا۔

تقریب سے خطاب کے دوران ترک صدر رجب طیب اردوان نے تمام مسلمان ممالک اور عالمی برادری اسرائیل کے حوالے سے مؤثر اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا۔

ترک صدر نے کہا کہ مسجد اقصیٰ میں ہونے والے ظالمانہ واقعات پر اگر کوئی خاموش ہے تو وہ اسرائیل کا ساتھی ہے۔ ترکی نے اقوام متحدہ، اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) اور تمام متعلقہ عالمی اداروں کو فوری کارروائی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

قبل ازیں جمعہ کے روز مسجد اقصیٰ اور مشرقی بیت المقدس میں اسرائیلی پولیس کی فائرنگ سے 205 فلسطینی نوجوان زخمی ہوگئے تھے جبکہ اسرائیل کے 16 پولیس اہلکاروں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ملی تھیں، تاہم گزشتہ روز مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی فوج اور فلسطینیوں کے درمیان ہفتے اور اتوار کی درمیانی شب دوبارہ جھڑپیں شروع ہوئیں تھی جس کے نتیجے میں مزید 50 افراد زخمی ہوگئے تھے۔

مذکورہ واقعے کے بعد فلسطینوں کے حقوق اور یہودی آباد کاروں کی جانب سے مقامی فلسطینینیوں کو بے دخل کرنے کے حوالے سے شدید تشویش کا اظہار کیا گیا تھا اور سوشل میڈیا پر اسرائیلی پولیس کے حملوں کی ویڈیوز بھی وائرل ہوگئی تھیں۔

دوسری جانب اسرائیل کی سپریم کورٹ بھی اس معاملے پر سماعت کرے گی۔

درایں اثنا یورپی یونین نے ہفتے کے روز اسرائیل پر زور دیا ہے کہ وہ القدس میں فلسطینیوں پرحملوں کا سلسلہ بند کرے اور پولیس کو تشدد سے رکنے کا مطالبہ کیا ہے۔

یاد رہے کہ پاکستانی دفتر خارجہ نےمسجد اقصٰی میں نمازیوں پر اسرائیلی حملے کی شدید مذمت کی تھی اور دفتر خارجہ نے مطالبہ کيا ہے کہ عالمی برداری فلسطینیوں کی حفاظت کیلئے فوری اقدامات کرے۔